QuestionsCategory: معاشرتی معاملاتمزدور کی اجرت سے کمیشن لینا
بایزید احمد asked 8 months ago

 مفتیان کرام کیا فرماتے ہیں اس بارے میں کہ میرے بڑے بھائی ﺍﯾﮏ ﮐﻤﭙﻨﯽ ﮐﺎ ٹھیکیدار ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﻣﺎﻟﮏ ﮐﻤﭙﻨﯽ ﻧﮯ ﻣﺰﺩﻭﺭﻭﮞ ﮐﯽ ﻣﮑﻤﻞ ﻧﮕﮩﺒﺎﻧﯽ ﺍﻧﮑﮯ ﺫﻣﮧ ﺩﯼ ﮨﮯ ﻣﺰﺩﻭﺭﻭﮞ ﮐﻮ ﺗﻼﺵ ﮐﺮ ﮐﮯ ﻻﻧﺎ ﺍن کے قیام وطعام ﺍﻭﺭ ﺑﻞ ﭘﯿﻤﻨﭧ ﮐﺮﻧﺎ ﺣﺘﯽ ﮐﮧ ﺍﮔﺮ ﻣﺰﺩﻭﺭﻭﮞ ﮐﻮ ﺍﭘﻨﯽ ﺗﻨﺨﻮﺍﮦ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺭﻗﻢ ﮐﯽ ﺿﺮﻭﺭﺕ ﭘﮍﺗﯽ ﮨﮯ ﺗﻮ ﺍﭘﻨﯽ ﻃﺮﻑ ﺳﮯ ﭘﯿﺸﮕﯽ ﺩﮮ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﺏ ﺍن کا ﻣﻌﺎﻣﻠﮧ ﯾﮧ ﮨﮯ ﮐﮧ ﻣﺜﻼ ﺍﮔﺮ ﻭﮦ ﻣﺎﻟﮏ ﮐﻤﭙﻨﯽ ﺳﮯ ﺗﻨﺨﻮﺍﮦ ﭼﻮﺩﮦ ﮨﺰﺍﺭ ﻟﯿﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺗﻮ ﻣﺰﺩﻭﺭﻭﮞ ﮐﻮ ﺑﺎﺭﮦ ﮨﺰﺍﺭ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﯾﮧ ﺑﺎﺕ ﻣﺎﻟﮏ ﮐﻤﭙﻨﯽ ﺍﻭﺭ ﻣﺰﺩﻭﺭﻭﮞ ﮐﻮ ﺑھﯽ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﮨﮯ ﯾﮩﺎﮞ ﺗﮏ ﮐﮧ ﻭﮦ ﻣﺰﺩﻭﺭﮞ ﮐﻮ ﯾﮧ ﺑﺎﺕ ﮐھﻮﻝ ﮐﺮ کہتےﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﺍﮔﺮ ﮐﺴﯽ ﺟﮕﮧ ﺍﺱ ﺳﮯ ﯾﺎﺩﮦ ﺗﻨﺨﻮﺍﮦ ﻣﻠﺘﯽ ﮨﮯ ﺗﻮ ﺁﭖ ﺟﺎﺳﮑﺘﮯ ﮨﮯ ﺍﺏ مجھے ﯾﮧ معلوم کرنا ﮨﮯ ﮐﮧ ﺍن کا ﯾﮧ ﻣﻌﺎﻣﻠﮧ ﺻﺤﯿﺢ ﮨﮯ ﯾﺎ ﻧﮩﯿﮟ؟

ﺍﮔﺮ ﺻﺤﯿﺢ ﻧﮧ ﮨﻮ ﺗﻮ ﺍﺯ ﺭﺍﮦ ﮐﺮﻡ ﺻﺤﯿﺢ ﻃﺮﯾﻘﮧ کی طرف رہنمائی کر دیں گے تو بڑی مہربانی ہوگی .

نوٹ:میں نے یہ سوال اپنے بڑے بھائی کے حکم سے کیا ہے۔

1 Answers
Mufti Shahid Iqbal answered 7 months ago

جواب:
مالک کمپنی کو پتہ ہونے کے بوجود نہ روکنا اور اس کا یہ معاملہ  کرتے رہنا اس مالک کمپنی کی طرف سے اجا زت کی دلیل ہے گویا کہ کمپنی خود اپنے وکیل کو اجازت دے رہی ہے۔ لہٰذا یہ معاملہ درست ہے اس میں کسی قسم کی قباحت نہیں ۔
واللہ اعلم بالصواب
دارالافتاء 
مرکز اھل السنۃ والجماعۃ سرگودھا پا کستان 
10فروری2019